+447504950603 info@shahinshah.com Cradley Heath West Midlands Birmingham UK

سویٹی کی لالی

سبزی والے کے پاس سے گزرتے ہوئے سبزی کو منہ مارا ۔ دکاندارجو کسی بات سے خفا بیٹھا تھا، نے لالی کو مارنے کے لیے لاٹھی اٹھائی ۔ لالی بچنے کے لئیے اچھلی تو مولی، گاجر اور پالک کے ٹوکر ے نیچے آ گرے ۔دکاندار کو غصہ چڑھا تو اس نے ایک موٹا آلو اٹھا کر لالی کو دے مارا۔ سامنے برتنوں کی دکان تھی۔ لالی تو بچ گئی مگر سامنے برتن اور دیگچیاں رکھی تھیں جوسب نیچے گر گئیں۔ لالی جو بھاگی تو تھوڑی دورمٹھائی کی دوکان تھی۔چند آدمی جو لالی کوپکڑنے کے لیے آگے بڑھے تو مٹھائی کے تھال بھی نیچے گر گئے ۔سامنے جوتوں کی دکان تھی۔ ان کے بکس بھی بھاگ دوڑ میں نیچے آ رہے۔ آگے لالی اور لالی کے پیچھے لوگ ۔ ہنگا مہ مچ گیا۔ چاروں طرف سے لوگ لالی کو پکڑنے دوڑے ۔ لوگوں نے مشکلوں سے لالی کو پکڑ ا۔ ایک تو لالی بھوکی تھی پھر تھکی ہوئی بھی تھی، حسرت بھر ی نظروں سے ادھر ادھر دیکھ رہی تھی۔ ایک آدمی بولا ۔اس پر چھر ی پھیر دو اور جس جس کا نقصان ہواہے وہ اس کے گوشت سے پورا کرے۔
یہ سننا تھا کہ لالی گھبرا کر نیچے گر گئی۔ لوگوں نے سمجھا کہ دبا کر پکڑنے سے شاید ادھ موئی ہو گئی ہے ۔ انہوں نے لالی کو چھوڑ دیا۔ لالی نے دو لمبے لمبے سانس لے کردوڑ لگا دی۔ جو بھاگی جو بھاگی، کہاں جا رہی تھی، اسے معلوم نہ تھا ۔نہ اسے گھر کا پتہ تھا۔ بھوک سے نڈھال ہوئی اور چلنے کی سکت نہ رہی کہ اچانک اسے موٹر سائیکل کی آواز سنائی دی۔ موٹر سائیکل کی آوازکی طرف دیکھا توسوئیٹی اپنے ابو کے ساتھ جا رہی تھی جو صبح سے اسکی تلا ش میں گھوم رہے تھے۔ انہوں نے لالی کو دیکھا تو خدا کا شکر ادا کیا اور اسے گھر لے آئے۔لالی نے عہد کر لیا کہ وہ کبھی گھر سے فضول باہر نہ نکلے گی اور نہ ہی کبھی گھر سے دور جائے گی۔ اسے نصیحت ہوگی تھی کہ کھو جانا آسان کام ہے مگرملنا مشکل ہو جاتا ہے۔ پیارے بچو! آپ بھی اگر کبھی گھر کے باہر کھیل کود کریں تو زیادہ دور مت جائیں ۔ ہمیشہ اچھے کھیل کھیلو اورپنے گھر میں رہو۔ امید ہے آپ میرا کہنا مان لیں گے۔

1 2

Leave a Comment

*