+447504950603 info@shahinshah.com Cradley Heath West Midlands Birmingham UK

غرور کا سر نیچا

ایک لمبی سڑک کے کنارے درخت کی چھاؤں تلے، بہت ہی خوبصورت ،صاف ستھری چمکتی ہوئی گھوڑا گاڑی کھڑی تھی ۔گھوڑا تندرست اور سفید رنگ کا تھا۔ گھوڑا گاڑی کا مالک موجود نہیں تھا، لہذا گھوڑا اپنی بگھی سمیت اپنے مالک کی راہ دیکھ رہا تھا۔ اتنے میں نئے ماڈل کی بی ایم ڈبلیو کار آکر گھوڑا گاڑی کے پاس رک گئی۔ کار کا مالک اپنے کام سے چلا گیا ۔ کار گھوڑے کو دیکھ کر نخرے دکھانے اور منہ بنانے لگی ۔
بی ایم ڈبلیو کاربولی۔ میرے پاس نہ آنااور ذرا پیچھے ہٹ کر رہنا۔ بھلا میرا تمہارا کیا مقابلہ؟ کہاں تم اور کہاں میں؟ جو کچھ مجھ میں ہے ،تم میں کہاں؟ میں اپنے مالک کو گانے سناتی ہوں، دنیا بھرکی خبریں سناتی ہوں، گرمیوں میں ماحول ٹھنڈا رکھتی ہوں۔میرامالک باہر کی گرمی اور لو سے محفوظ رہتا ہے اور سردیوں میں ماحول گرم رکھتی ہوں۔ بارش سے بچاتی ہوں، نگر نگر کی سیر کرواتی ہوں، اندھیرے میں روشنی کرتی ہوں، میری ہر کوئی تعریف کرتا ہے اورمیری سیر کرنے کی خواہش بھی رکھتا ہے۔ اے گھوڑے !تم کون ہو؟ کبھی خود کو دیکھا ہے ؟ تم میرا کیا مقابلہ کروگے جو میرے ساتھ کھٹرے ہو؟
گھوڑا کار کی بات سن کر مسکرا کر بولا۔ اے دنیا کی ایجاد کردہ کار! میں کون ہوں؟ مجھے اُس مالک نے بنایا ہے جو اس کابھی مالک ہے جو تیری سیر کرتا ہے ۔ جب سے دنیا بنی ہے ،تبھی سے ہم اسی طرح اپنے مالکوں کا بوجھ اٹھائے ہوئے ہیں ۔نہ گرمی کی پرواہ، نہ سردی کا احساس، نہ بھوک کا پتہ، نہ آندھی کا ڈر، نہ طوفان کا خطرہ، نہ مجھے تمہاری طرح تیل ،پیٹرول کی ضرورت ہی پڑتی ہے۔ میں اپنے مالک کا وفادار ہوں۔ تمہاری طرح نہیں کہ لاکھوں خرچ کرواتی ہو۔ میرا خرچہ ہی کیاہے؟ خالی گھاس، دانہ، پانی۔ تمہاری طرح نہیں ،جدھر پیٹرول ختم ہوا اُدھر رک گئیں۔ لوگ آئیں ،دھکہ لگائیں۔ آئے دن تمہاری مستری کے ہاتھوں مرمت ہوتی ہے ۔ کبھی اس گیراج میں ،تو کبھی اُس گیراج میں کھڑی نظر آتی ہو۔ مجھے بھوک لگے یا پیاس ،میں برداشت کرتا ہوں ، منزل کی طرف چلتا رہتا ہوں اور انشاء اللہ تعالیٰ چلتا ہی رہونگا۔ اپنے مالک کو شرمندہ نہیں کرتا اور جس نے مجھے بنایا ہے اُس مالک کائنات سے ہمیشہ اپنی اور اپنے مالک کی تندرسی کی دعا کرتا رہتا ہوں، کیونکہ میرا کام ہی بوجھ اٹھانا ہے اورہمیشہ سفر پر رہنا ہے ۔

1 2

Leave a Comment

*