اماں للے کی موٹر کار

اماں للٰے کی ہے یہ موٹر کار
جب اس کو تم چلانے لگو
اس کی تم دیکھو رفتار نرالی
دھکے پہ دھکہ لگانے لگو
نخرے کرکے احسان جتائے
کبھی کسی کا یہ سانس پھلائے
چلتے درمیان سٹرک کے رک جائے
گرمی سے دھکہ لگانے سے جان گھبرائے
موڈ میں آئے تو ایسے بھگاؤ
کبھی بغیر پٹرول کے ہی چلتی ہے
دائیں بائیں جدھر چاہو اسے گھماؤ
کبھی پٹرول پی کر بھی ضد کرتی ہے
رفتار تیری کبھی بیل گاڑی جیسی ہو جاتی ہے
رفتار تیری کبھی ہوائی جہاز جیسی ہو جاتی ہے
کبھی یہ لمبی تان کر سو جاتی ہے
گھر سے نکالنے کا سوچو تو بھاگ جاتی ہے
ردی کے بھاؤ بیچنے کا سوچا
انجر پنجر کھولنے کا سوچا
دنیا کا شائید نواں عجوبہ ہی ہو تم
مگر ہم سب کو دل و جان سے پیاری ہو تم
واہ ری اماں للٰے کی کار
تیری کیا دوں میں مثال


(published 55 Posts on Shahinshah)

I am Shahinshah from United Kingdom. I have a variety of interests including poetry, stories writing, designing, art, design and craft, fashion wear designing and I have studied in City College, Sandwell College and Dudley College, UK.

Leave a Comment

*